امام صادق علیه السلام : اگر من زمان او (حضرت مهدی علیه السلام ) را درک کنم ، در تمام زندگی و حیاتم به او خدمت می کنم.
اگر اهل بیت علیهم السلام کی ولایت صرف صاحب عقل مخلوقات کے لئے ہے تو پھریہ کس طرح کہہ سکتے ہیں کہ آل الله کی ولایت تمام ممکنات و مخلوقات کے لئے ہے؟

اگر اهل بیت علیهم السلام کی ولایت  صرف صاحب عقل  مخلوقات کے  لئے  ہے تو  پھریہ  کس  طرح  کہہ  سکتے  ہیں  کہ آل الله کی  ولایت  تمام  ممکنات  و  مخلوقات  کے لئے  ہے؟

جواب:

 اہلبیت  اطہار  علیہم  السلام  کی  ولایت  کا  تمام مخلوقات  کے  لئے  ہونا  اس  چیز  سے  مشروط  نہیں  ہے  کہ  وہ    سب  صاحب  عقل  اور  ذوی  العقول  میں  سے  ہوں  بلکہ  ان  میں  عقل  اور  درک شعورجس  حدتک  بھی  ہو  ، ان  پر  آل  اللہ  کی  ولایت  اسی  حد  تک  ہو  گی.

اس  بناء  ہرذوی  العقول  پر  اہلبیت  اطہار  علیہم  السلام  کی  ولایت ان  کے  صاحب عقل  ہونے  کی  وجہ  سے  ہے  اور  دوسری  مخلوقات  (جیسے  زمین  و  آسمان)  کہ جو  اگرچہ صاحب  عقل  نہیں  ہیں  لیکن  ان  پر  اہلبیت  اطہار  علیہم  السلام  کی  ولایت  ان  کے  مادی  درک  و  شعور  کی  حد  تک  ہے.

اور  اب  یہ  ثابت  ہو  چکا  ہے  کہ  پانی، مٹی، پھول  اور  پودے  وغیرہ  درک  و  شعور  رکھتے  ہیں ۔ اس  بناء  پر  ان  مخلوقات  پر  اہلبیت عصمت  و  طہارت  کی  ولایت  ان  کے  شعور کی  حدکے  مطابق ہے۔

یہ آیۀ شریفۀ »فَقالَ لَها وَلِلأَرضِ ائتِیا طَوعاً أَو کَرهاً قالَتا أَتَینا طائِعینَ« (سورۀ فصلت، آیۀ 11) اس  کی دلیل ہے که آسمان و زمین درک و شعور رکھتے  ہیں، اس  آیت  کی  مانند  دوسری  آیات کہ  جو  مخلوقات  کی  تسبیح کرنے کے  بارے  میں  ہیں نیز  متعدد  روایات  بھی  اس  حقیقت  پر  دلالت  کرتی  ہیں۔

 

بازدید : 4536
بازديد امروز : 2683
بازديد ديروز : 3004
بازديد کل : 87528809
بازديد کل : 68324228